بلاگ معلومات

خواب ، سائن اور سمبل

بعض خواب بہت واضح ہوتے ہیں، بالکل عیاں (explicit) اور کلیئر کہ جن کی تعبیر کی بھی ضرورت نہیں پڑتی، جیسا کہ اگر کوئی خواب میں یہ دیکھے کہ اس نے اپنی بیوی کو تین طلاق دے دی ہے، تو طلاق کا معنی بالکل واضح ہے اور وہ جدائی اور مفارقت (separation) ہے۔ البتہ یہاں یہ امکان ہے کہ یہ خواب، خواب دیکھنے والے کی نفسی کیفیت ہو یعنی اس کی اپنی بیوی سے لڑائی چل رہی ہو اور وہ اسے طلاق دینے کا سوچ رہا ہو اور یہ سوچ خواب کی صورت ظاہر ہو جائے۔ لیکن اگر حقیقی زندگی میں کوئی اختلاف نہیں چل رہا اور نہ ہی شوہر کی طلاق کی کوئی سوچ ہے تو پھر اس کا معنی طلاق ہی ہے۔

اسی طرح بعض خوابوں میں ابہام اور رمز وکنایہ ہوتا ہے۔ اگر تو یہ ابہام ابتدائی درجے کا ہو کہ ذرا ذہن پر زور دینے سے بات سمجھ آ جاتی ہے تو یہ خواب کی تعبیر کا دوسرا درجہ ہے کہ جس میں خواب ایک سائن کی مانند ہوتا ہے۔ سائن اور سمبل میں فرق ہے۔ سائن میں آبجیکٹ، سنٹرل ریفرنس ہوتا ہے جبکہ سمبل میں شیء اپنے فزیکل معانی سے ٹرانسینڈ (transcend) کر جاتی ہے۔ تو خواب میں اگر یہ دیکھے کہ اس نے شراب پی ہے تو یہ حرام مال کھانے کا سائن ہے۔ سائن کو آپ سائن بورڈ کی مثال سے سمجھ لیں کہ جیسے سائن بورڈ آپ کو واضح ڈائریکشن دے دیتا ہے، اسی طرح اگر خواب میں علامت ایسی ہو جو آپ کو تعبیر کے لیے ایک واضح ڈائریکشن دے دے تو اس علامت کو سائن کہتے ہیں اگرچہ منزل یعنی تعبیر تک پہنچنے کے لیے سفر پھر بھی کرنا پڑے گا۔

اگر خواب میں سانپ دیکھے تو یہ دشمن کو دیکھنے کا سائن ہے۔ اور چھپکلی کو دیکھنا، حاسد کا سائن ہے۔ البتہ اگر خواب میں کالی بلی دیکھے تو یہ عاشق جن کا سمبل ہے کیونکہ سانپ کی دشمنی اور چھپکلی کا حسد معروف ہے جبکہ بلی کا عشق غیر معروف۔ اسی طرح اگر خواب میں اپنے آپ کو غسل کرتا دیکھے تو یہ توبہ کا سمبل ہے کہ جیسے غسل سے جسمانی پاکیزگی حاصل ہوتی ہے تو اسی طرح توبہ سے روح کی طہارت حاصل ہوتی ہے۔ اگر خواب میں یہ دیکھے کہ سامنے کے نیچے والا دانت گر گیا ہے تو اس سے مراد حمل کا گرنا ہے اور یہ سمبلائزیشن ہے۔ اور اگر دانت دوبارہ آ جائے تو اس کا مطلب دوبارہ حمل کا ٹھہرنا ہوتا ہے۔ اور بعض صورتوں میں دانت گرنے سے مراد قرض کی ادائیگی بھی ہوتی ہے اور یہ بھی سمبل ہے۔ اسی طرح خواب میں اپنے آپ کو برہنہ دیکھنا، کبھی سائن ہوتا ہے اور کبھی سمبل۔

اگر خواب میں دیکھے کہ گھوڑے پر سوار ہے تو اس کی ایک تعبیر یہ ہے کہ اسے اپنے نفس پر کنٹرول حاصل ہے تو اس صورت میں گھوڑا اس تعبیر کے لیے سائن ہو گا۔ اور اس خواب کی ایک تعبیر یہ بھی ہو سکتی ہے کہ اسے سوسائٹی میں شرف ومقام حاصل ہو گا کہ گھوڑا تمکنت کی علامت ہے۔ تو اس تعبیر کے لیے گھوڑا سمبل ہے کیونکہ اس تعبیر میں سنٹرل ریفرنس شیئ نہیں رہی بلکہ اس شیء سے ٹرانسینڈ کرنے والے معانی ہیں اور وہ تمکنت اور عزت وشرف ہے۔ اور عورت اگر اپنے بدن پر مردوں جیسے بال دیکھے تو یہ پریشانیوں کی کثرت ہے اور ایسے بال جھڑ جانے سے مراد پریشانیوں کا جاتے رہنا ہے۔ یہاں بھی بال، پریشانی کے لیے ایک سمبل ہے۔ سائن کی صورت میں خواب کی تعبیر آسان ہوتی ہے جبکہ سمبل کی تعبیر مہارت کے بغیر ممکن نہیں ہے کہ یہ پوری ایک سائنس ہے۔ خواب کی تعبیر میں مہارت کے لیے تین چیزیں ضروری ہے؛ ایک تعبیر کا مَلکہ جو عطائے خداوندی (God gifted) ہوتا ہے، دوسرا دین ودنیا کے علم میں وسعت، اور تیسرا فہم اور سوجھ بوجھ میں گہرائی۔