معلومات

ڈولفن کا ایک دوسرے کو نام سےپکارنہ

ورویٹ بندر ایک دوسرے کواپنے آوازوں کے بنا پر پہچان لیتے ہے اسطرحsongs birds ایک دوسرے کے اوازوں کا موازنہ کرکے ایک دوسرے کو پہچان لیتے ہے ۔ ایک دوسرے کے پہچان رکھنا خاص طور ہر آن جانوروں کو میں زیادہ ضروری ہوتا ہے جو ایک گوپ کے شکل میں رہتے ہے یا پھر وہ جو ایک دورے سے روزانہ کے بنیادوں پر ملتے ہے ۔یہ اس لیے ضروری ہوتا ہے تاکہ آپسی جھگڑا نہ ہو مثلا اگر کوئی بھی جو حال ہی میں دوسرے سے ہارا ہو تو وہ ہارا ہوا جانور دوبارہ لڑنے کے کوشش نہیں کریگا اس طرح یہ پہچان گروپ میں رہنے والے جانوروں کے لئے بھی ضروری ہوتا ہے تاکہ وہ ایک دوسرے کو پہچان سکے اور ان کے درمیان رشتہ مظبوط ہوسکے ۔ یہ خصوصیات  انسانوں میں بھی پایاجاتا ہے ہم ایک دوسرے کو شکل اوازوں کے بنیاد پر پہچان لیتے ہے ۔مگر ان سب سے بھی جو اہم ذریعہ ہے وہ یہ ہے کے ہم ایک دوسرے کو نام دیتے ہے اور ایک دوسرے کو ان ناموں کے بنیاد پر پہچان لیتے ہے ہم ایک دوسرے کو انہی ناموں پر پکارتے ہے ۔یہ نایاب خصوصیات ہم bottlenecks dolphins کے ساتھ شیئر کرتے ہے

Bottlenecks dolphins گروپ کے شکل میں رہتے اور یہ ایک مخصوص قسم کے آواز نکالتے ہے جس کے بنیاف پر ایک دوسرے دوسرے کو پہچان تھے ہے ۔ان کے یہ خصوصیت تب معلوم ہوگئی جب ایک تجربے دوران یہ دیکھا گیا کہ یہ اس پاس موجود ہر ایک چیز کو ایک مخصوص قسم کے اواز کے ساتھ رپورٹ کرتے ہے اس سے معلوم ہوتا ہے کے اسطرح یہ ایک دوسرے کے پہچان رکھتے ہے ۔ایک ننھا دولفن اپنے ماں باپ کے ساتھ اٹھ سال تک ریتا ہے اور اس دوران ان کے درمیاں ایک مظبوط رشتہ قاہم ہوجاتا ہے ۔اگرچہ ان کے یہ کالونی خوراک کے تلاش میں ایک جگہ سے دوسرے جگہ منتقل ہوتے رہتے ہے لیکن پھر بھی اس بھگدڑ کے دوران ان میں ایک مظبوط رشتہ ہوتا ہے اور یر ایک دوسرے کو پہچان لیتا ہے ۔

ہر ڈولفن نشونما کے پہلے کچھ مہینوں میں ایک مخصوص قسم کے اواز کو تیار کرتے جسے signature whistle کہاجاتا ہے ۔یہ اواز دیرپا ہوتا ہے اور ان میں تبدیلی بہت کم آتے ہے ۔اس اواز کے بنا پر گروہ مے دوسرے نمبر ان کو پہچانتا ہے جوکہ یہ اسکے نام کے طور پر استعمال ہوتا ہے ۔
ایک ڈولفن تقریبا آٹھ مختلف ڈولفنز کے signature whistle کے پہچان رکھتاہے ۔اس سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ کسطرح ایک ڈولفن اپنے ممبر کے آوازوں کو پہچانتاں ہے۔۔۔

تحریر نظام اللہ