صحت

ذیابیطس افراد کیلئے ورزش كیسی ہو؟

آپ کتنی اور کس قسم کی ورزش کر سکتے ہیں، اس کا انحصار آپ کی عمر، آپکی جسمانی حالت، اور آپکے مرض کی نوعیت پر ہے۔ مثلا ایک نوجوان لڑکے سارا دن کھیل کود کرتا رہے تو اُسکے لئے ٹھیک ہو سکتا ہے لیکن ایک بزرگ جسکے جوڑوں میں درد ہے، اور ساتھ دل کی تکلیف بھی ہے، اُسکےلئے دس منٹ کی ورزش بھی مشکل ہو سکتی ہے۔ اس لئے ورزش کا کوئی نیا پروگرام شروع کرنے سے پہلے بہتر ہو گا کہ آپ اپنے معالج سے مشورہ کر لیں۔

ایک صحتمند اور درمیانہ عمر کے فرد کیلئے سب سے آسان اور نسبتاً محفوظ ایسی ورزشیں ہیں جن میں آپکے پٍٹھے بار بار سُکڑتے اور پھیلتے ہیں۔ مثلاً تیزی سے چلنا، دوڑنا، تیرنا، سائیکل چلانا اور اُچھنا کودنا وغیرہ۔وزن اُٹھانے والی ورزشیں، جیسا کہ باڈی بلڈنگ وغیرہ میں پٹھے چونکہ کافی دیر تک مسلسل اکڑے رہتے ہیں ، اسلئے خون کی نالیاں دبنے سے دل پر دباؤ بڑھ جاتا ہے۔ اسکا ہر گز یہ مطلب نہیں ہے کہ ایسی ورزشیں کرنا ہی نہیں چاہئیں، لیکن بہتر ہو گا کہ ایسی ورزشیں اختیار کرنے سے پہلے آپ اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کر لیں۔

ورزش کتنی ہو ؟
آپکو کم از کم ہفتے میں 5 دن تقریباٰ آدھا گھنٹہ روزانہ تیز قدموں سے پیدل چلنا چاہئے۔ آگر مسلسل آدھا گھنٹہ چلنا آپکے لئے مشکل ہو تو آپ اسے دو یا تین حصوں میں تقسیم بھی کرسکتے ہیں۔ تاہم مسلسل آدھا گھنٹہ چلنا زیادہ مفید ہو گا.

ورزش كا بہترین وقت كیا ہوگا؟
ورزش كرنے سے چونكہ خون میں شوگر كم ہوتی ہے اسلیئے ذیابطیس كے مریضوں كو خالی پیٹ ورزش کرنے میں احتیاط سے کام لینا چاہئے۔ اسطرح اُنكے خون شوگر خطرناك حد تك کم ہو سکتی ہے۔ اگر ورزش شروع كرتے وقت آپكو كهانا كهائے ہوئے ایك ڈیڑهـ گهنٹہ گزر چكا ہے تو بہتر ہے كہ پہلےآپ کُچھ كهالیں ـ درمیانے درجے كی ورزش كےلئے دو نمكین بسكٹـ،یا آدها كپ دودھ كافی ہوگاـ لیكن اگر آپ كوئی بهاری مشقت كرنا چاہتے ہیں تو اُسی حساب سے زیادہ خوراك لیں اور 20 سے 30 منٹ انتظار كر لیں تاكہ خوراك آپكے خون میں شامل ہو جائے ـ روزمرہ معمول میں تبدیلیاں جن سے بالواسطہ ورزش بڑھ جاتی ہے

آپنے ہم عمر لوگوں كا ایك گروپ بنا كر روزانہ سیر كا معمول بنا لیں. كسی ہلكی پهلكی جسمانی ورزش والے كهیل میں حصہ لینا شروع كردیں. اگر آپ نے كوئی گهریلو ملازم ركها ہوا ہے تو اسے چهٹی دے دیں اور اسكے حصے كا كام خود كرنے كی كوشس كریں. لفٹ كی بجائے سیڑهیاں استعمال كرنے كی كوشش كریں. لنچ كے بعد اپنے دفتر كی عمارت یا آپنے لان كا ایك یا دو چكر لگا لیں. شاپنگ كےلئے جائیں تو گاڑی ذرا فاصلے پر كهڑی كر دیں اور ٹہلتے ہوئے شاپنگ سینٹر تك چلے جائیں. نماز با جماعت ادا كرنے كےلئے دن میں جتنی دفعہ ممكن ہو، مسجد تشریف لے جائیں ـ بعد میں جب آپ اس ورزش كے عادی ہو جائیں تو آہستہ آہستہ آپ زیادہ نمازوں كےلئے مسجد جا سكتے ہیں.