شاعری، عشق اور بازار حسن

ابّا میاں! میری ناقص رائے میں، اچھا شاعر بننے کی دو اہم شرائط ہیں. پہلی شراب اور دوسرا طوائف سے عشق.’ بنے میاں نے سنہرے رنگ کے مشروب کی ایک چسکی لیتے اور نیم باز آنکھوں سے، مرزا عبدلودود کیطرف دیکھتے ہوئے، کمال دانشمندی سے عرض کیا بنے میاں…

فوجو چوہڑا اور مولوی عبدالغفور

مجھے اپنے محلے میں ہمیشہ سے، دو لوگ بہت پسند تھے. وہ تھے مولوی عبد الغفور اور فوجو چوہڑا. حیرت کی بات یہ تھی کے وہ دونوں ایک دوسرے کے نہایت گہرے دوست تھے اور ایک دوسرے سے بہت محبت کرتے تھے. اب آپ یقیناً سوچتے ہونگے کے کہاں ایک مومن مسلمان…

غبارے، دیوسائی اور بوڑھا میجر

دیوسائی کے برف پوش میدانوں میں شیوسر نامی ایک جھیل ہے. اس جھیل کے پاس، ایک اکیلے پہاڑ کی چوٹی پر، بدھ بھکشوؤں کی ایک قدیم اور ویران خانقاہ ہے. سنا ہے کے کچھ سال پہلے ایک ریٹائرڈ فوجی افسر دنیا سے تنگ آ کر وہاں جا کر بس گیا تھا. وہ شاید…

کال گرل اور گڑیا – شہریار خاور

کال گرل اور گڑیا زندگی کے پیچیدہ اور کانٹوں بھرے راستوں پر مسلسل سفر کرتے، عینی کے لہو لہان پیر کب کے تھک چکے تھے. کچی قبرکی تہہ میں رکھا، سفید کفن میں لپٹا اسکا نازک وجود، اس تکان کی گواہی دے رہا تھا. گورکن نے سیمنٹ کی پہلی سلیب اٹھائی ہی…

نندیا پورکی رانی – شہریار خاور

.امّاں؟’ ہتھیلی پر رکھی افشاں کو پھونک مار کر اڑاتے، رانی نے پوچھا’ .جی، امّاں کی جان……اب کیا ہے؟’ عایشہ نے مسکراتے ہوئے، رانی کی طرف دیکھ کر پوچھا’ امّاں میرا دل کرتا ہے، اتنی ڈھیر ساری افشاں ہو میرے آس پاس.’ رانی نے دونوں ہاتھ پھیلاتے…

نوراں کنجری – شہریار خاور

جامعہ مسجد سے ہیرا منڈی لاہور کی ایک پرانی مسجد میں کر دی. وجہ یہ تھی کے میں نے قریبی علاقے کے ایک کونسلر کی مسجد کے لاوڈ سپیکر پے تعریف کرنے سے انکار کر دیا تھا. شومئی قسمت کے وہ کونسلر محکمہ اوقاف کے ایک بڑے افسرکا بھتیجا تھا. نتیجتاً میں…