معلومات

‏اگر زمین سے پانچ سیکنڈز تک محض پانچ سیکنڈز تک کے لئے آکسیجن غائب ہو جائے؟

ہم سب ایک منٹ تک سانس تو روک ہی سکتے ہیں، لیکن یہاں بات ہماری نہیں پوری زمین کی ہے۔ پوری زمین سے محض پانچ سیکنڈز تک کے لئے آکسیجن غائب ہو جائے تو؟؟

ساحلِ سمندر پر لیٹے لوگوں کی جلد فورا ‏جل جائے گی۔ کیونکہ ہوا میں موجود مالیکیولر آکسیجن ہی ہمیں الٹراوائلٹ روشنی سے بچا
دن کے وقت آسمان کالا سیاہ ہو جائے گا، اندھیرا پھیل جائے گا۔ کچھ دکھائی نہیں دے گا۔دھات سے بنی تمام وہ چیزیں جو الگ الگ ہیں فورا سے پہلے ایک دوسرے کے ساتھ ‏ویلڈ ہو جائیں گی جڑ جائیں گی۔ کیونکہ ہوا میں موجود آکسیجن کی تہہ ہی انھیں آپس میں جڑنے سے روکے رکھتی ہے۔

زمین کا پینتالیس فیصد حصہ آکسیجن سے بنا ہے۔ جیسے ہی آکسیجن غائب ہوئی ساری زمین کھردری ہو جائے گی، اتھل پتھل ہو جائے گی، اس پر قدم رکھنا مشکل ہو جائے گا۔ ‏ہم ہوا کا اکیس فیصد دباؤ کھو دیں گے لہذا ہمارے کان کے پردے فورا پھٹ جائیں گے۔کنکریٹ کو زمین پر جمے رہنے میں آکسیجن مدد دیتی ہے۔ آکسیجن کے غائب ہوتے ہی کنکریٹ سے بنی تمام عمارتیں سیکنڈز میں ہی زمین بوس ہو جائیں گی۔

آکسیجن پانی کا ایک تہائی حصہ ہے۔ ‏جیسی ہی آکسیجن غائب ہوئی دنیا کے تمام سمندروں کا پانی ہائیڈروجن گیس بن جائے گا اس کا والیم بڑھ جائے گا یہ تمام گیس اڑ کر فضا میں چلی جائے گی۔۔۔چلیں اب سوچتے ہیں کہ اگر آکسیجن گیس اپنی مقدار سے دوگنی ہو جائے یعنی جتنی ہم اب حاصل کر رہے ہیں اس کا دوگنا ہو ‏جائے، محض پانچ سیکنڈز کو تو ۔۔۔ہمارے کاغذ کے جہاز زیادہ دیر اڑیں گے۔گاڑیوں میں موجود پٹرول زیادہ لیٹر تک چلے گا۔ہم زیادہ خوش اور زیادہ چالاک ہوں گے_‏جمناسٹک کا مظاہرہ کر سکیں گے۔ ہماری جسمانی کارکردگی میں اضافہ ہو گا۔لیکن

زمین پر دیوقامت حشرات الارض گھومیں گے۔جی ہاں۔ یہ کاکروچ، لال بیگ، بچھو، چھپکلیاں سب کی جسامت اتنی زیادہ ہو جائے گی کہ آپ کو خوف آنا شروع ہو جائے گا۔۔ ‏کیونکہ حشرات الارض کی جسامت کا سائز فضا میں موجود آکیسجن کی مقدار پر منحصر ہوتا ہے۔
تودیکھ لیں ۔۔۔کیسے ہمارے رب نے ہر چیز کو مناسب رکھا ہے۔اور تم اپنے رب کی کون کون سی نعمت کو جھٹلاو گئے